Indian security Forces forced mature Kashmiri boys to walk nude on the road

Indian security Forces forced mature Kashmiri boys to walk nude on the road

 
Advertisement

Clikck the link to watch the video

http://www.jammukashmir.tv/9-Human-Rights/Mature-Kashmiri-boys-forced-to-walk-nude-on-the-road-by-the-indian-security.html

Advertisement
 

انٹرنیٹ پر ایک ویڈیو گردش کر رہی ہے جس میں کچھ نوجوانوں کو برہنہ حالت میں دیکھا جا سکتا ہے اور سکیورٹی اہلکاروں کی وردی میں ملبوس کچھ لوگ انہیں لے کر جا رہے ہیں۔

ویڈیو کو دیکھنے اور اس میں شامل لوگوں کی بول چال سے لگتا ہے کہ یہ بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں بنائی گئی ہے۔ بھارتی نیم فوجی فورس سی آر پی ایف کے ترجمان نے اس ویڈیو کو غلط قرار دیا اور کہا ہے کہ یہ ایک سازش ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر گزشتہ رات سے گردش کرنے والی یہ ویڈیو تقریباً تین منٹ کی ہے جس میں سات سے آٹھ نوجوانوں کو مکمل طور پر برہنہ دیکھا جا سکتا ہے۔

ان نوجوانوں نے اپنے تمام کپڑے ہاتھوں میں اٹھا رکھے ہیں اور صرف جوتے پہنے ہوئے ہیں۔ ان کے ساتھ پولیس اور سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کی وردیوں میں لوگ بھی نظر آ رہے ہیں جن کی بات چیت سے لگتا ہے کہ برہنہ لوگوں کو تھانے لے جایا جا رہا ہے۔

یہ ایک میدان یا میدانی علاقہ معلوم ہوتا ہے اور پیچھے پیڑ نظر آ رہے ہیں۔ ویڈیو کی کوالٹی سے لگتا ہے جیسے اسے موبائل فون پر بنایا گیا ہے

پوری ویڈیو میں ایک شخص مسلسل بولتے ہوئے سنائی دے رہا ہے۔ وہ بار بار ان نوجوانوں سے کہہ رہا ہے کہ وہ اپنا جسم ڈھکنے کی کوشش نہ کریں اوراپنے کپڑے اوپر رکھیں۔

ایک جگہ وہ یہ بھی کہتا ہے کہ ان لڑکوں نے انہیں صبح سے پریشان کر رکھا تھا۔ وہ اپنے ایک ساتھی کو یہ ہدایت بھی دیتا ہے کہ لڑکوں کے ساتھ مار پیٹ نہ کریں۔

بیک گراؤنڈ میں دوسرے لوگوں کی آوازیں بھی سنائی دے رہی ہیں جو بظاہر ان لوگو ں کا مذاق اڑا رہے ہیں۔

تقریباً تین منٹ سات سکنڈ کی اس ویڈیو میں جو پس منظر دکھایا گیا ہے اس میں متعدد پولیس اور دیگر سکیورٹی اہلکار چھہ سات نوجوانوں کو برہنہ کر کے اپنے ساتھ لے جا رہے ہیں۔ درمیان میں وہ انہیں گالیاں بھی دیتے ہوئے سنائی دیتے ہیں۔پولیس اور سکیورٹی فورسز کے اہلکار بڑی تعداد میں ان برہنہ نوجوانوں کے ساتھ چل رہے ہیں۔ یہ نوجوان بظاہر سہمے اور گھبرائے ہوئے لگتے ہیں اور وہ اہلکاروں کے ہر حکم کو بلا مزاحمت مانتے ہوئے دکھائی دیتے ہیں۔

لیکن یہ کہنا مشکل ہے کہ ویڈیو کہاں بنائی گئی ہے، کس نے بنائی ہے، انٹرنیٹ پر کس نے شائع کیا اور کب کی ہے اور نہ ہی یہ کہ جن نوجوانوں کو لے جایا جا رہا ہے وہ کون ہیں۔ تاہم وڈیو میں کئی بار نوجوانوں کی شکلیں قریب سے دکھائی گئی ہیں۔

لیکن کئی لوگوں کے چہرے صاف نظر آ رہے ہیں۔

جو لوگ پولیس کی وردی میں نظر آ رہے ہیں اور جس شخص کی آواز مسلسل سنائی دے رہی ہے ان کا لہجہ بظاہر ایسا ہے جیسا کہ کشمیریوں کا ہوتا ہے۔

You might like

There are no related posts